ہم ٹیوٹا کے تعاون سے اپنے حلقے میں ہنر مندوں کی تعلیم اور تربیت کیلئے بھی ادارے قائم کریں گے۔ امیر العظیم

لاہور 14جولائی2018ئ
ترجمان جماعت اسلامی پاکستان اور حلقہ این اے 135 اور پی پی 161 سے متحدہ مجلس عمل کے امیدوار امیر العظیم نے پی آئی اے کالونی اور وارث کالونی میں کارنر میٹنگز اور معززین سے ملاقاتوں میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ 30 سال سے اس حلقہ پر قابض خاندان نے حلقہ میں ایک کالج بھی نہیں بنایا۔ یہاں کے بچے اور بچیاں تعلیم کیلئے دوسرے علاقوں میں جانے پر مجبور ہیں۔امیر العظیم نے کہا کہ اب عوام پوچھتے ہیں کہ یہ منتخب نمائندے کروڑوں اربوں کے ترقیاتی فنڈز کہاں استعمال کرتے رہے۔ پورے حلقے میں لڑکوں اور لڑکیوں کے وہی سکول ہیں جو 30 سال پہلے تھے اور ان سکولوں میں بھی بنیادی سہولیات موجود نہیں۔
امیر العظیم نے اعلان کیا کہ ہم کامیاب ہو کر ہر یونین کونسل میں لڑکوں، لڑکیوں کا ایک سکول اور ہر پانچ یونین کونسلوں پر مشتمل علاقے میں ایک انٹر کالج بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ حلقہ میں معززین، ریٹائرڈ اساتذہ، آئمہ مساجد اور منتظمین مدارس پرمشتمل کمیٹیاں سرکاری تعلیمی اداروں کی مانیٹرنگ کریں گی۔ ہم وہاں سہولیات اور اساتذہ کی فراہمی کو یقینی بنائیں گے تاکہ ہمارے حلقہ کے بچوں کو تعلیم کیلئے دور دراز کی آبادیوں میں نہ جانا پڑے۔ انہوں نے اعلان کیا کہ ہم ٹیوٹا کے تعاون سے اپنے حلقے میں ہنر مندوں کی تعلیم اور تربیت کیلئے بھی ادارے قائم کریں گے۔