متحدہ مجلس عمل قومی سیاست میں توازن ، وقار اور برداشت کا کلچر لانا چاہتی ہے ۔ لیاقت بلوچ

لاہور13 جولائی 2018ء
متحدہ مجلس عمل اور جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور این اے 130 لاہور سے امیدوار لیاقت بلوچ نے اپنے حلقہ انتخاب میں جامع مسجد بلال کالونی ، مسجد مدینہ شجاع روڈ ، مسجد دارالسلام چوہدری کالونی میں نمازیوں سے گفتگو، کلفٹن کالونی ، الحمد کالونی ، غوثیہ کالونی اور خیبر بلاک ، علامہ اقبال ٹاﺅن میں کارنر میٹنگز اور خواتین اور یوتھ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ ووٹرز اپنی اور جمہوریت کی عزت و سیاسی جمہوری نظام کو کرپٹ مافیا سے نجات دلانے کے لیے متحدہ مجلس عمل کا ساتھ دیں ۔ کتاب پر مہر لگائیں ، ووٹ کی طاقت کو اپنی طاقت بنائیںاور باعزت و باوقار بن جائیں ۔ مہنگائی ، بے روزگاری ، جان و مال اور عزت کا عدم تحفظ تمام معاشرتی اور اخلاقی قدریں تباہ کررہاہے ۔ زندگی سستی اور کفن دفن مہنگا ہو گیاہے ۔ایم ایم اے کا پیغام ہے کہ اچھے لوگ آئیں گے اور عوام کے مسائل حل ہوں گے ۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ اپنی قیادت کا استقبال اور احتجاج ہر پارٹی کا آئینی جمہوری حق ہے ۔کارکنان کی بلاجواز گرفتاریاں حکومتوں کو کبھی بھی راس نہیں آئیں ۔ آج جس صورتحال کا سامنا مسلم لیگ ن کو ہے ، وہ اپنا بویا ہی کاٹ رہے ہیں ۔ سیاسی جمہوری استحکام کے لیے آئین کی بالادستی ، جمہوریت اور پارلیمان کو عزت دی ہوتی تو لاقانونیت کا سامنا نہ کرنا پڑتا ۔ انہوں نے کہاکہ بے گناہ کارکنان کو فوری رہا کیا جائے ۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل قومی سیاست میں توازن ، وقار اور برداشت کا کلچر لانا چاہتی ہے ۔ ہر پارٹی اپنے منشور اور لائحہ عمل کی پابند ہے ۔محبان دین ووٹرز ان شاءاللہ 2018 ءکے انتخابات میں دینی طاقت کا علم بلند کریں گے اور سیکولر ، مفاد پرست و بے مقصد سیاست کو شکست ہوگی ۔
کارنر میٹنگز سے مولانا امجد خان ، احمد سلمان بلوچ ، عامر نثار خان ، مولانا غضنفر عزیز ، مولانا عبدالودود قاضی ، احسان چوہدری اور شفیق گجر امیدوار پی پی 160 نے بھی خطاب کیا ۔