25 جولائی کے بعد ملک میں متحدہ مجلس عمل کے بغیر کوئی قانون سازی نہیں ہوسکے گی ۔ امیر العظیم

لاہور یکم جولائی 2018ء
ترجمان جماعت اسلامی پاکستان اور این اے 135 سے متحدہ مجلس عمل کے امیدوار قومی اسمبلی امیر العظیم نے کہاہے کہ سابقہ حکمرانوں نے پانچ سال حکومت کی مگر عوام کے مسائل کی طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ حلقہ میں تعلیمی اداروں ، ہسپتال اور خاص طور پر ایک بڑے قبرستان کی سخت ضرورت ہے مگر حلقہ سے منتخب ہونے والے حکومتی ارکان اسمبلی نے بلند و بانگ دعوﺅں اور بار بار عوام سے کیے گئے وعدوں کا پاس نہیں کیا ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے حلقہ میں مختلف کارنر میٹنگز ، علماءکرام اور معززین حلقہ سے ملاقاتوں کے موقع پر گفتگو اور منصورہ میں ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ ورکرز کنونشن سے امیر جماعت اسلامی لاہور ذکر اللہ مجاہد و دیگر نے بھی خطاب کیا ۔
امیر العظیم نے کہاکہ 25 جولائی کے بعد ملک میں متحدہ مجلس عمل کے بغیر کوئی قانون سازی نہیں ہوسکے گی ۔ خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں ایم ایم اے کی حکومتیں بنیں گی اور مرکز میں متحدہ مجلس عمل ایک فعال کردار ادا کرے گی ۔انہوںنے کہاکہ ملک میں امریکہ نواز حکومتیں اور امریکی ایجنڈا ناکام ہوچکاہے ۔ امریکہ اور اس کے کاسہ لیسوں نے ملک و قوم کو سوائے پریشانیوں کے کچھ نہیں دیا اور آج یہ حالت ہے کہ دنیا بھر میں پاکستان کا عزت و وقار داﺅ پر لگ چکاہے ۔ انہوں نے کہاکہ ایم ایم اے آئین کی اسلامی دفعات کا تحفظ کرے گی اور دستور پاکستان اور اسلامی دفعات پر عملدرآمد کو یقینی بنائے گی تاکہ ملک میں آئین کی بالادستی کا خواب شرمندہ تعبیر ہوسکے۔