قرآن و سنت کو عملاً ملک کا بالاتر قانون بنایا جائے گا ۔لیاقت بلوچ

لاہور 30جون 2018ء
متحدہ مجلس عمل اور جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور این اے 130 سے امیدوار قومی اسمبلی لیاقت بلوچ نے اپنے حلقہ میں انتخابی مہم کے دوران خواتین کنونشن ، جامع مسجد غوثیہ کالونی میں خطاب جمعہ ، جامع مسجد طیبہ ،پاک بلاک ، راوی بلاک ، علامہ اقبال ٹاﺅن اور مسلم ٹاﺅن میں انتخابی دفتر کے افتتاح اور الحمد کالونی ، نیو کیمپس کالونی ، سنٹرل کالونی اور وحدت کالونی میں کارنر میٹنگز سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کرپشن کے خاتمہ اور ملک میں اچھی حکمرانی کے لیے پارلیمنٹ ، انتظامیہ ، عدلیہ ، احتساب کا موثر نظام ، کرپشن کے غیر جانبدار تحقیقاتی اداروں ، اہل دیانتدار سو ل سروس ، موثر بااختیار بلدیاتی نظام ، آزاد مہذب غیر جانبدارانہ میڈیا اور سول سوسائٹی کو مضبوط کرنا متحدہ مجلس عمل کا لائحہ عمل او ر ہدف ہے ۔اسٹیٹس کو فساد اور خرابیوں کی جڑ ہے ۔ بااعتماد سیاسی جمہوری نظام اور اہل دیانتدار قیادت ہی اسٹیٹس کو توڑے گی ۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل خواتین کو قرآن و سنت کی تعلیم کی روشنی میں حقوق کا تحفظ ، معاشرہ میں تعمیری کردار کی ادائیگی ، غیر اسلامی معاشرتی رسموں سے نجات اور خواتین کو عزت اور روزگار کی فراہمی یقینی بنائے گی ۔ انہوں نے کہاکہ نظام مصطفی ہی عوام کے مسائل کا حل ہے ۔ قرآن و سنت کو عملاً ملک کا بالاتر قانون بنایا جائے گا ۔ سود اور قرضوں کی لعنت ختم کر کے خود انحصاری اور اسلامی معاشی نظام لائیں گے ۔ ایک سوال کے جواب میں لیاقت بلوچ نے کہاکہ صنعت ، تجارت ، زراعت کے لیے مہنگی ترین بجلی اور مہنگا ترین تیل جان لیوا ہے ۔ سستی بجلی اور پانی کی قلت کے خاتمہ کے لیے ڈیموں کی تعمیر ناگزیر ہے ۔ حکمران مجرمانہ غفلت کا شکا ر رہے ۔
زونل امیر احمد سلمان بلوچ ، مولانا غضنفر عزیز ، عبدالودود قاضی ، قدیر شکیل اور ناظم انتخاب انجینئرخالد عثمان نے بھی پروگراموں سے خطاب کیا ۔