ستر سال سے نااہل جمہوری اور غیر جمہوری نظاموں نے عوام کے دکھوں میں اضافہ کیاہے۔لیاقت بلوچ

لاہور 29جون2018ء
متحدہ مجلس عمل اور جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور این اے 130 سے امیدوار قومی اسمبلی لیاقت بلوچ نے کہاکہ پاکستان داخلی ، خارجی اور سماجی مسائل اور جن چیلنجز کا سامنا کر رہاہے اس کے لیے سنجیدگی ، تحمل ، بردبار ی ، تدبر اور فہم و فراست کی ضرورت ہے ۔ملک الزام تراشی ، پگڑی اچھالنے اور غیر سنجیدہ کھلنڈرے پن کی سیاست کا متحمل نہیں ہوسکتا ۔متحدہ مجلس عمل بحرانوں میں گھرے پاکستان کو سنجیدہ ، باصول ، باکردار اور منشور پر عمل کرنے والی قیادت دے رہی ہے ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اچھرہ ، یونین پارک میں عوامی ناشتہ ، ماڈل ٹاﺅن میں علماءکنونشن ، کمبوہ کالونی میں خواتین کنونشن ، فاروقیہ مسجد ، جامعہ عثمانیہ رسول پارک ، جامع مسجد طیبہ میں نمازیوں سے خطاب اور چوک عاشق آباد ، کرنال پورہ ، رحمن پورہ میں دفترکی افتتاحی تقریب اور جے آئی یوتھ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ ستر سال سے نااہل جمہوری اور غیر جمہوری نظاموں نے عوام کے دکھوں میں اضافہ کیاہے۔ نوجوان باصلاحیت اور ملک و ملت کا مستقبل ہیں ۔ نوجوانوں کو 2018 ءکے انتخابات میں فیصلہ کن کردار ادا کرناہے ۔انہوںنے کہاکہ خواتین آبادی کا نصف ہیں ، گھروں اور نئی نسل کا محاذ خواتین نے سنبھالاہے ۔ انہوںنے کہاکہ عوام مہنگائی ، بے روزگاری، بے حیائی کا خاتمہ چاہتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ منبر و محراب کے وارث علما کو میدان عمل میں نکل کر رسم شبیری ؓ ادا کرنا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل دینی ووٹرز کو متحد ، یک آواز اور یک جان کر ے گی ۔ دینی محاذ پر انتشار سیکولرزم ، کرپٹ اور عوام دشمن نظام کی حمایت کے مترادف ہے ۔ انہوںنے کہاکہ ہم پانی کی قلت کے خاتمہ ، تجارت ، زراعت اور صنعت کو سستی بجلی دینے کے لیے غیر متنازعہ ڈیم تعمیر کریں گے ۔
پروگراموں سے احمد سلمان بلوچ ، شاہد نوید ملک ، قاضی عبدالودود ، مولانا غضنفر عزیز ، طارق اکرم اور آصف بھٹی نے بھی خطاب کیا ۔