پاکستان کو لوٹا کریسی کی نہیں ، حقیقی جمہوریت کی ضرورت ہے ۔سینیٹر سراج الحق

امیر جماعت اسلامی و نائب صدر متحدہ مجلس عمل پاکستان سینیٹر سراج الحق نے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ لینڈ ، ڈرگ اور شوگر مافیا ،جس کو عالمی اسٹیبلشمنٹ نے پاکستان پر مسلط کیا تھا ، ان کو آنے والے انتخابات میں ناکامی و نامرادی کا سامنا کرناپڑے گا ۔ ہمیں ایک دن بھی حکومت کا موقع ملا تو ملک میں قرآن اور اسلام کی حکومت ہوگی ۔ 2002 ء میں ہم نے کے پی کے میں اسلامی بل پاس کیا مگر مشرف نے اپنی بد معاشی کے زور پر اس بل کو نافذ نہیں ہونے دیا ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کو لوٹا کریسی کی نہیں ، حقیقی جمہوریت کی ضرورت ہے ۔ لوٹا کریسی نے سیاست اور جمہوریت کو بدنام کیا ۔ جن لوگوں کو جیلوں میں ہوناچاہیے ، انہیں عوام کے کندھوں پر سوار کیا جارہاہے ۔ عوام ان درندوں کا اپنے ووٹ کی قوت سے محاسبہ کریں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ایم ایم اے کا ایجنڈا بڑا واضح ہے ہمیں اللہ نے موقع دیا تو کوئی غریب تعلیم سے محروم نہیں رہے گا بجٹ کا پانچ فیصد تعلیم پر خرچ کریں گے اور نوجوانوں کو روزگار ملنے تک بے روزگاری الاؤنس دیں گے ۔ ستر سال کی عمر کے بوڑھوں کو بڑھاپا الاؤنس اور غریب کا مفت علاج ہوگا ۔ سودی نظام ختم کر کے زکوۃ کا نظام قائم کریں گے اور نو کروڑ لوگ زکوۃ دیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ایک ہفتہ میں نگران حکومت نے بارہ کھرب قرض لے لیا نگران حکومت کے پاس اتنے بڑے قرضے لینے کا آئینی اختیار نہیں ۔ نگرانوں سے کہتے ہیں کہ قرضوں کی ماری قوم پر مزید قرضوں کا کوہ ہمالیہ تعمیر نہ کریں ۔انہوں نے کہاکہ ملک میں خلافت راشدہ کے نظام کو زندہ و پائندہ کرنے کے لیے قوم منبر و محراب کا ساتھ دے گی اور مساجد کے لاؤڈ سپیکرز سے اللہ اکبر کی صدائیں گونجیں گی اس بار چاروں صوبوں میں متحدہ مجلس عمل کامیاب ہوگی ۔ ایم ایم اے کرپشن کے خاتمہ کے لیے قوانین بنائے گی ۔انہوں نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل کی حکومت کا پہلا کام ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کا ہوگا ۔ پاکستان کو اداکاروں کی نہیں محمد بن قاسم اور سید صلاح الدین کی ضرورت ہے۔ انہوں نے ترکی کے نو منتخب صدر طیب اردگان کو کامیابی پر مبارکباد بھی دی ۔