مرکزی پارلیمانی بورڈ کا اجلاس 20 جون کو 2 بجے اسلام آباد میں ہوگا ۔لیاقت بلوچ

متحدہ مجلس عمل اور جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے مولانا فضل الرحمن ، سراج الحق ، پیر اعجاز ہاشمی ،علامہ عارف حسین نقوی ، حافظ عبدالکریم سے فون پر رابطہ اور گفتگو کی اور انتخابات ، متحدہ مجلس عمل کے صوبائی مرکزی پارلیمانی بورڈاور رابطہ عوام مہم پر تبادلہ خیال کیا ۔ انہوںنے کہاکہ متحدہ مجلس عمل کے مرکزی پارلیمانی بورڈ کا اجلاس 20 جون کو 2 بجے اسلام آباد میں ہوگا ۔ اجلاس میں پنجاب ، خیبر پختونخوا کی چند قومی اور صوبائی نشستوں پر زیر التوا معاملات کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا ۔ 23 جون کو اسلام آباد میں عید ملن اور 28 جون کو کراچی میں تاریخ ساز علماءو مشائخ کونشن منعقد ہوگا ۔
دریں اثنا لیاقت بلوچ نے لاہور میں این اے 130کے کارکنان کی عیدملن پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ انتخابات کے بروقت انعقاد میں اب آئینی و انتظامی کوئی رکاوٹ نہیں لیکن جمہوریت کی آستینوں میں چھپے ناپسندیدہ عناصر بے یقینی پھیلا کر ریاست اور سیاست میں تصادم اور انارکی پیدا کرنا چاہتے ہیں ۔ ریاست کے تمام ادارے بروقت انتخابات کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات جاری رکھیں ۔ بے یقینی پیدا کرنے والے عناصر کی سرکوبی کی جائے ۔
لیاقت بلوچ نے کہاکہ پانی کی قلت قومی معاشی زندگی کا اہم ترین مسئلہ ہے ۔ پانی کے ذخائر او ر سستی بجلی تجارت ، صنعت اورزراعت کے لیے لائف لائن ہیں ۔ کالا باغ ڈیم کا مسئلہ انتخابات کے مرحلہ پر اٹھا کر پنجاب سندھ خیبر پختونخوا کے قوم پرست اور عوامی سہولیات کے دشمن اپنے مذموم مقاصد چاہتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ متحدہ مجلس عمل غیر متنارعہ ڈیموں ، بھاشا ، داسو ، مہمند ، اکھوڑی کی تعمیر پر ترجیحی کام کرے گی ۔ کالاباغ ڈیم کے لیے بہر حال اور بالآخر قومی قیادت کو اتفاق رائے پیدا کرنا ہوگا